پاکستان کی وہ یونیورسٹی جس کے وائس چانسلر کو گھر پر چھاپہ مار کر گرفتار کر لیا گیا،مگر کیوں؟؟وجہ ناقابل یقین

حیدرآباد(ویب ڈیسک) حیدرآباد پولیس نے ہفتہ کو اسری یونیورسٹی کے چانسلر پروفیسر ڈاکٹر حمید اللہ قاضی کو ان کے گھرپرچھاپہ مارکر گرفتارکرلیا‘ جعلی ڈگری کی شکایت پر ایف آئی آر کے اندراج کے بعد گرفتاری عمل میں آئی ہے جس کی ایس ایس پی حیدرآباد نے بھی تصدیق کردی ‘ڈاکٹر حمیداللہ کے اہل خانہ کا کہناہے کہ

پولیس نے علمی شخصیت کی گرفتاری کے لئے چادر اور چاردیواری کاتقدس پامال کیاہے۔روزنامہ جنگ کے مطابق ہٹڑی پولیس کی بھاری نفری نے مسلم سوسائٹی قاسم آباد میں چانسلر اسری یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر حمید اللہ قاضی کے گھرپر بھاری نفری کے ہمراہ چھاپہ مارا کر انہیں گرفتار کرلیاہے جس کی سی سی ٹی وی فوٹیج بھی سوشل میڈیا پر وائرل کی گئی ہیں ۔”جنگ“ کی جانب سے گرفتاری کی تصدیق کے لئے ایس ایس پی حیدرآباد امجد شیخ سے رابطہ کیاگیا تو انہوں نے گرفتاری کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ اسری یونیورسٹی حیدرآباد کی انتظامیہ نے ان کے خلاف ہٹڑی تھانے میں مقدمہ درج کرایا ہے کہ ڈاکٹر حمید اللہ اوران کے دیگر ساتھیوں نے ایک طالبعلم کو جعلی ڈگری جاری کی تھی جس کی ہیک سے تصدیق پر ڈگری جعلی ثابت ہوئی۔ انہوں نے کہاکہ ڈگری صرف سیکورٹی ایکسچینج کمیشن کی جانب سے جاری کردہ کاغذ پر دی جاتی ہے لیکن جاری کردہ ڈگری نہ تو اسری یونیورسٹی نے جاری کی ہے اورنہ ہی ہیک نے جاری کی ہے۔

Source link
hassannisar.pk

اپنا تبصرہ بھیجیں